بڑھاپے میں رزق کی وسعت کی دعا۔۔۔

Berhapy mai rizk ki wasat ki dua

بسم اللہ الرحمن الرحیم، السلام علیکم۔ناظرین کرام کو خوش آمدید کہتے ہیں اور ہم امید کرتے ہیں کہ آپ خیریت سے ہوں گے ۔۔اور ہماری دعا بھی ہے کہ اللہ کریم آپ کو سدا عافیت کے سائے میں رکھے۔۔۔ناظرینِ اکرام۔۔۔۔اس دورِ مادیت میں احسان فراموشی اس قدر عام ہے کہ لوگ سگے ماں باپ کے احسانات کو بھی فراموش کرنے سے نہیں چوکتے۔جو ماں باپ اپنی تمام اولاد کی کفالت کی ذمے داری بہ خوشی اٹھاتے ہیں، بڑھاپے میں ان کی ذمے داری اٹھانا تمام اولاد کے لیے مل کر بھی ایک مشکل کام تصور کیا جانے لگا ہے۔

وہ بچے جو معصوم بچپن میں ماں کے لیے آپس میں ’میری ماں، میری ماں‘ کہہ کر جھگڑتے تھے، وہی سیانے ہو کر ’تیری ماں، تیری ماں‘ کہہ کر جھگڑتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ یہ احسان فراموش اپنی اولاد کے لیے تو جان نچھاور کرتے ہیں، لیکن خود جن کی اولاد ہیں، انھیں ذرا خاطر میں نہیں لاتے۔ اور بڑھاپا انسان میں کمزوری بھی پیدا کر دیتا ہے جس سے انسان میں معاش کے ذرائع تک پہنچنا مشکل ہو جاتا ہے ، لہذا بڑھاپے میں رزق کی وسعت کے لئےیہ دعا کے الفاظ حدیث کی کتاب طبرانی کی حدیث نمبر 3611 میں موجود ہیں ۔۔آپ بھی ان الفاظ کو زبانی یاد کر لیجئے تاکہ۔۔۔ دنیا وآخرت کے فائدے آپ بھی حاصل کرسکیں۔۔۔اللَّهُمَّ اجْعَلْ أَوْسَعَ رِزْقِكَ عَلَيَّ عِنْدَكِبَرِسِنِّیوَانْقِطَاعِ عُمرِی

یعنی اے اللہ! جب میں بوڑھا ہوجاؤں اور میری عمر ختم ہونے لگے تو اپنا رزق مجھ پر وسیع کردے۔ناظرینِ اکرام ۔۔۔۔ آپ اس نبوی دعا کو اپنی نماز میں بھی پڑھ سکتے ہیں۔۔ اور صبح شام کے وظائف میں بھی شامل کر سکتے ہیں۔ کیونکہ رزق اللہ تعالٰی کی ایسی نعمت ہے، جس کی تقسیم کا اختیار اللہ تعالٰی نے اپنے پاس رکھا ہے۔ اللہ تعالٰی کا ارشادہے :” ’’ اللہ تعالٰی تو خود ہی رزاق ہے، مستحکم قوت والا ہے۔لہذا اللہ پاک ہمیں بھی اس نبوی دعا کو پڑھنے والا بنائے اور رزق کے تمام مسائل حل فرمائے۔۔۔۔آمین ۔۔۔۔

Leave a Comment