بادشاہ کا اپنی چار بیویوں کے ساتھ سلوک اور ان سے سوال جواب

Aik Badshah Jis ki Char Biwiyan Thin

پہلی بیوی کا وہ بہت خیال رکهتا تها اس کی خوبصورتی،صحت ،اور ضروریات سب پر مقدم تهی ۔ اوراس بات کا علم دوسری بیویوں اورعزیزواقارب سب کوتها- دوسری بیوی سے یہ بہت پیار کرتاتها لیکن اس کے بارے میں ہمیشہ فکر مند رهتا کہ یہ مجهے چهوڑ کر کسی اور کے پاس چلی جائیگی – تیسری بیوی کامعاملہ عجیب تها یہ اگر پیار کرتا وہ بهی پیار سے جواب دیتی – یہ غصہ کرتا ناراض هوتا وہ بهی غصہ کرتی ناراض هوجاتی ۔چوتهی بیوی عجیب تر تهی یہ ناراض هوتا یا خوش , غصہ هوتا یا غمگین ہر حال میں یہ بیوی اسکے ساته خوشی خوشی رهتی تهی –ایک دن بادشاہ بیمار هوا اور مرض شدید هوگیا مرنے کے قریب هوگیا تو اپنی= پہلی بیوی سے کہنے لگا هم نے اتنا اچها وقت ساته گزارا ، میرا دل چاهتا کہ هم قبر میں بهی ساته رهیں – پہلی بیوی نے فورا بے شرمی سے جواب دیا ناممکن دوسری بیوی سے ڈرتے ڈرتے یہی بات کہی تو اس نے تو حد کردی اور کہا کہ میں تو تیری زندگی میں تیرے ناراض هونے کے باوجود غیروں کے پاس چلی جاتی تهی مجہ سے اتنی طویل رفاقت کی امید احمق هی کرسکتا هےتیری بیوی سے کہا تم کچه کرلو تیسری بیوی کہنے لگی تیرے ساته بہت اچها وقت گزارا هے ا سکا لحاظ رکہ کر میں تیرے غسل کفن دفن کا بہتر انتظام کردونگی ذکر خیر بهی کرونگی لیکن قبر کا ساتہ بہت مشکل هے –= چوتهی بیوی سے یہی سوال کیا تو اسکا جواب رلادینے والاتها ، چوتهی بیوی نے جواب دیا کہ آپ تو مجهے کچہ نهی سمجهتے تهے – آپکے سلوک کا خود آپکو اور مجهے خوب علم ہے لیکن میں آپ کے ساته قبر میں رهنے کیلئے تیار هوں ،آپ غور کریں یہ بادشاہ کون تها ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ بادشاہ میں اور آپ ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔پہلی بیوی سے مراد اپنا جسم اور نفس هے ۔۔۔۔۔۔ دوسری بیوی سے مراد مال هے ۔۔۔۔ تیسری بیوی سے مراد رشتدارہیں ۔۔۔۔ چوتهی بیوی سے مراد اعمال ہیں

Leave a Comment