بھٹکے ہوئے انسان کو سیدھے راستے پر لانےکے لیے ایک آیت کا وظیفہ۔

gunahon sy nijat ka amal

۔ہدایت کےاس عمل کے کر نے کا طریقہ یہ ہے کہ سورۃ البقرہ کی آیت نمبر پانچ کو 313 دفعہ پڑ ھ کر دم کر کے گیارہ دن تک اس شخص کو پلا ئے جس کو ہدایت پر لانا مقصود ہوں ۔اللہ رب العزت اس کی مد د سے اسے ہدایت نصیب فرما دیں گے۔ آپ کی آسانی کے لیے سورۃ البقرہ کی آیت نمبر پانچ کو تلاوت بھی کیے دیتے ہیں جو کہ آپ کو سکرین پر بھی نظرآرہی ہے۔
أُولَٰئِكَ عَلَىٰ هُدًى مِنْ رَبِّهِمْ وَأُولَٰئِكَ هُمُ الْمُفْلِحُونَیعنی یہ ہیں وہ لوگ جو اپنے پروردگار کی طرف سے صحیح راستے پر ہیں اور یہی وہ لوگ ہیں جو فلاح پانے والے ہیں۔

ناظرین کرام ۔۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اکثر اپنے صحابہ کرام رضی اللہ عنہم کو سیدھے راستے پر چلنے کی ترغیب دیا کرتے تھے۔ آپ کی مسنون دعاؤں میں سے ایک دعا یہ بھی ہے.سیدھا راستہ کہ اے اللہ! مجھے سیدھا راستہ دکھا۔ ہدایت ملنے کے بعد بندے کو اللہ تعالی اُن اعمال کی توفیق عطا فرماتا ہے.جو اللہ تعالی کو پسند ہو، اُسے اپنی رضا عطا فرماتا ہے.اور اُسے سلامتی والے راستوں پر چلاتا ہے،

حتی کہ اُسے سلامتی والے گھر یعنی جنت میں داخل کردیتا ہے۔اور وہ اللہ رب العزت کا پسندیدہ بندہ بن جاتا ہے ۔اللہ رب العزت اس کی دعاوں کو قبول فرما تے ہیں اور اسے دونوں جہانوں میں سرفراز فرما دیتے ہیں۔ ہماری بھی اللہ رب العزت سے دعا ہے کہ اللہ رب العزت تمام امت کوہدایت نصیب فرما ئے اور بھٹکے ہوئے لوگوں کو سیدھا راستہ دکھا ئے۔آمین ۔ ثم آمین

Leave a Comment