روس میں ‘سیاہ’ برف باری

siyah beraf barii

روس کے خطے کیمیروو کے 3 شہروں پروکوپیوسک، کیسیلووسک اور لیننسک کوزنیتسکی کے پراسیکیوٹرز سیاہ برف باری کی وجوہات جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔مقامی میڈیا نے برف باری کے سیاہ ہونے کا ذمہ دار علاقے میں موجود کوئلے کے مقامی پلانٹس کو قرار دیا ہے۔پروکوپیوسکا فیکٹری کے ڈائریکٹر جنرل اناتولے وولوک نے کوزباس ٹی وی کو بتایا کہ ان کے پلانٹ میں ہوا کو کوئلے کے پاوڈر سے محفوظ رکھنے والی شیلڈ نے کام کرنا چھوڑ دیا تھا۔کیمیروو کے ڈپٹی گورنر آندرئی پانو، جو ماحولیات کے انچارج بھی ہیں وہ مقامی ماہرین سے اس معاملے پر بات چیت کے لیے ملاقات کریں گے۔انہوں نے تجویز پیش کی کہ صرف کوئلے کا پلانٹ اس مسئلے کی وجہ نہیں،کوئلے کے بوائلر، گاڑیوں کا دھواں اور کوئلہ جلانے والے پلانٹ کو بھی ذمہ دار قرار دیا جانا چاہیے۔سوشل میڈیا پر علاقہ مکینوں کی جانب سے الزام عائد کیا گیا کہ اس علاقے میں طویل عرصے سے ماحولیاتی حفاطت کی کمی ہے، جہاں زندگی کوئلے پر مبنی ہے۔سیاہ برف باری کی تصاویر پر صارف نے تبصرہ کیا کہ ’کیا جہنم میں برف باری ایسی لگتی ہے؟’ایک صارف نے کہا کہ ’صفائی کا کوئی نظام نہیں، دھول مٹی، کچرا اور کوئلہ علاقے میں موجود ہے، ہم اور ہمارے بچے اس ماحول میں سانس لے رہے ہیں، یہ محض ایک خواب ہے‘۔ایک اور صارف نے تبصرہ کیا کہ ’حکومت عوامی مقامات پر سگریٹ نوشی پر پابندی عائد کرتی ہے لیکن کوئلے کے غبار میں سانس لینے اور اسے ہمارے پھیپھڑوں میں جانے دیتی ہے‘۔سوشل میڈیا پر عوام کی ایک بڑی تعداد آلودگی کی وجہ سے تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے۔ایک صارف کا کہنا تھا کہ ’یہ علاقہ صرف وسائل حاصل کرنے کی جگہ ہے اور حکام یہاں کے حالات اور ثقافت کی پرواہ نہیں کرتے۔

Leave a Comment