امام علی ‌ؓ نے فر ما یا ایسے انسان کو کبھی نہیں چھوڑنا

Imam Ali ny fermaya Aisay insaan ko kabhi nahi choorna

امام علی ؑ کی خدمت میں ایک شخص آ یا اور دستِ ادب کو جوڑ کر عرض کرنے لگا یا علی ؑ زندگی میں سب سے قیمتی انسان کونسا ہے بس یہ کہنا تھا تو امام علی ؑ نے فر ما یا اے شخص! یاد رکھنا ۔ سب سے قیمتی انسان وہ ہے جس کے وجو د میں سب سے زیادہ احساس ہو ۔

اللہ تعالیٰ ہر انسان کی زندگی میں کم سے کم ایک مر تبہ ایک ایسا انسان ضرور بھیجتا ہے جو اس کا اس سے بھی زیادہ احساس کر تا ہے لیکن افسوس تو یہ ہے کہ انسان اپنے غلط فیصلے اور عادتوں کی وجہ سے اس قیمتی انسان کو کھو دیتا ہے یاد رکھنا میں نے اللہ کے رسول سے سنا بد نصیب ہے ۔

وہ جو اپنے اس دوست کو کھو دے جو دوست اپنے وجود سے زیادہ اس کا احساس کر تا ہو۔ حضرت عباس ؑ کے قبر مبارک کے آس پاس پانی طواف کر تا ہے اور اللہ نے اس پانی کے وجود میں شفا ء بخشی ہے جناب ابن عباس ؑ کی قبر مبارک کو طواف کرنے والا پانی بیمار کے لیے شفاء ہے پھربے روزگار کے لیے روزگار اور پر یشان حال کو سکون بخشتا ہے جناب عباس ؑ کی قبر تک یا اس قبر کے پانی تک ہر خاص عام نہیں پہنچ سکتا تبھی ہم نے اس پاک مقدس پانی کو فی سبیل اللہ اس امام بارگاہ پر رکھ دیا ہے جو مومنین بیمار ہیں مفلس ہیں تنگ دست ہیں مجھے امید ہے غازی عباس علمدار کی قبر مبارک کا یہ پانی پی کر اللہ انہیں شفاء فر ما ئے گا۔

اللہ تمام مو منین کو سلامت رکھے۔ ایک فقیر سید کی طرف سے جناب عباس علمدار سے عقیدت رکھنے والوں کو ایک تحفہ آبِ شفاء۔ حضرت علی نے فر ما یا تین طریقوں سے پر یشانی خوشی میں بد ل جا تی ہے پہلا ۔ خاموش رہنا خاموش رہنے سے پر یشانی کم ۔ دوسرا صبر کرنے سے ختم۔

تیسرا شکر کر نا شکر کرنے سے خوشی میں بدل جا تی ہے جس سے حد سے زیادہ محبت ہو اس سے اتنی ہی نفرت بھی ہو سکتی ہے کیونکہ خوبصورت شیشہ جب ٹوٹتا ہے تو خطر ناک ہتھیار بن جا تا ہےکبھی کسی کے سا منے صفائی پیش نہ کر و کیوں کہ جسے تم پر یقین ہے۔

اسے ضرورت نہیں اور جسے تم پر یقین نہیں وہ ما نے گا نہیں زمانے کی دو حالتیں ہیں کبھی کو ئی چیز چھین لیتا ہے اور کبھی کو ئی چیز دے دیتا ہے جو چیز چھین لے وہ لوٹ کے نہیں آ تئی اور جو دے دے اس کے لیے بقا نہیں۔ حسد ایک لا علاج بیماری ہے جا حاسد یا محسود کی مو ت تک دور نہیں ہو تی مو ت کو ہمیشہ یاد رکھو مگر مو ت کی آرزو کبھی نہ کرو۔

جو تمہیں غم کی شدت میں یاد آ ئے تو سمجھ لو کہ وہ تم سے محبت کر تا ہے جو بھی بر سر اقتدار آتا ہے وہ اپنے آپ کو دوسروں پر ترجیح دیتا ہے مال و دولت کا قیا مت میں حساب ہو گا جب کہ ایمان ِ نجات کا ذریعہ ہے ۔

Leave a Comment