رمضان کے جمعہ کا خاص وظیفہ

Ramzan ky jummay ka khas wazeefa

آج ہم آپ کو ایک ایسا عمل بتائیں گے جو کہ آپ نے اس وقت کر نا ہے جس کے بارے میں جس کے بارے میں حضور نبی کریم ﷺ نے فر ما یا کہ بندہ جو بھی دعا کر ے گا اللہ تعالیٰ ضرور قبول فر ما ئے گا رسول اللہ ﷺ نے جمعہ کے دن کا ذکر کیا اور فر ما یا اس میں ایک گھڑی ایسی ہے جس میں کو ئی مسلمان نماز پڑھے اور اللہ سے کچھ مانگے تو اللہ تعالیٰ اس کو عنایت فر ما دیتا ہے۔

اور ہاتھ کے اشارے سے آپ ﷺ نے واضح فر ما یا کہ وہ سات مختصر سی ہیں۔ ایک اور حدیث ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فر ما یا وہ گھڑی خطبہ شروع ہونے سے لے کر نماز کے ختم ہونے کا درمیانی وقت ہے۔بحوالہ مسلم شریف ایک اور حدیث میں رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فر ما یا جمعہ کے دن ایک گھڑی ایسی ہو تی ہے کہ مسلمان بندہ جو مانگتا ہے اللہ اسے عطا فر ما دیتے ہیں اور وہ گھڑی عصر کے بعد ہو تی ہے۔

دیگر احادیث کی روشنی میں قبو لیت والی گھڑی کے متعلق علماء نے دو وقتوں کی تاکید کی ہے نمبر ایک دونوں خطبوں کے درمیانی وقت جب امام ممبر پر کچھ لمحات کے لیے بیٹھتا ہے اور دوسرا غروبِ آفتاب سے کچھ وقت پہلے ہم آپ کو جمعہ کے دن نماز ِ عصر کے بعد کا ایک خاص عمل بتا ئیں گے جو کہ آپ نے نمازِ عصر اور نمازِ مغرب کے درمیان کرنا ہے اس عمل کے بارے میں جاننے کے لیے ہمارے ساتھ ر ئیے ۔ کیونکہ اس وظیفے سے آپ کو بہت ہی زیادہ فائدہ حاصل ہونے والا ہے۔

آج کا یہ وظیفہ ان لوگوں کے لیے ہے جن کو کوئی ایسی حاجت ہے جو کہ پوری نہیں ہو رہی چاہے وہ رزق کے حوالے سے ہے چاہے وہ اولاد کے حوالے سے ہے یا پھر شادی کے حوالے سے ہے تو ایسے افراد کو چاہیے کہ وہ جمعہ کے دن نمازِ عصر کے بعد دو رکعت نماز نفل اور اس تسبیح کا عمل کر یں جو کہ ابھی آپ کو بتاتے ہیں آپ نے دو رکعت نماز نفل اس طرح پڑھنے ہیں کہ پہلی رکعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد ایک مر تبہ آیت الکرسی اورپچس مر تبہ سورۃ الفلق پڑھنی ہے۔

اور دوسری رکعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد ایک مر تبہ سورۃ اخلاص اور بیس مر تبہ سورۃ الفلق پڑھنی ہے دو رکعت نماز نفل ادا کرنے کے بعد یعنی سلام پھیرنے کےبعد پچس مر تبہ لا حول ولا قوۃ الا باللہ العلی العظیم۔ یاد رہے کہ آپ نے دعا کرنی ہے آپ کی جو بھی حاجت ہے جو بھی مشکل ہے اس کے لیے دعا کر یں جن لوگوں کا رزق کا کوئی معاملہ ہے یا رزق میں بر کت نہیں ہے وہ رزق کے لیے دعا کر یں جن لوگوں کے ہاں اولاد نہیں ہے وہ اولاد کے لیے دعا کریں۔

Leave a Comment