قیامت کا خوفنا ک منظر شیطان کو مو ت کیسے ہوگی؟

Qayamat ka khofnaak manzer shetaan ko moat kesy hoo gi?

اللہ آسمانوں پر دیکھ رہا ہے۔ا یک دن میں مروں گا۔ ایک دن آپ مریں گے ۔ ایک دن کائنات مرے گی۔ ایسا ہی سورج نکلے گا ۔ جیسا آج نکلا ہے۔ ایسا ہی جمعہ نکلے گا جیسا آج ہی جمعہ ہے۔ اور کراچی کی صبح ایسے ہی ہوگی جیسے آج ہوئی ہے۔ رات رخصت ہو گی ۔ جیسے کل رخصت ہوگی۔ دن آنے کے لیے تیار ی کررہا ہوگا۔ کہ میرے آنے کاوقت ہوچکا ہے۔ پرندے نکلنے کے لیے تیار ہوں گے۔

کوے سب سےپہلےصبح کو بیدار ہوتےہیں۔ کوے دانے کی تلاش میں نکلتے ہیں۔ مزدوروالوں کی دور لگ رہی ہے۔ منڈیوں والوں کی دوڑ لگ رہی ہے۔ کہیں جانے کے لیے تیاری ہورہی ہے۔ کہیں دولہا دولہن کو سجانے کے لیے تیاریاں ہورہی ہیں۔ ایسے ہی صبح دفتروں کوبھاگے جارہے ہیں بائیسویں گریڈ والا بھی اور چوبیسواں گریڈ والا بھی۔ ماں لقمہ توڑ کر اپنے بچے کے منہ میں لارہی ہے۔

اور ایک ایسی ہی صبح ہوگی۔ جس کا نقشہ کھینچا ہے۔ زمین کاسینہ چیرنے سے پہلے ، پرندے کے پر سکڑنے سےپہلے، اور قینچی کپڑے کو کاٹنےسے پہلے ، اور نوٹ دکاندار کو پہنچانےسےپہلے ، دولہن کو بندیا پہنانے سےپہلے، دولہا کو سہرہ پہنانےسےپہلے، کرسی پر کرسی کےبیٹھنےسے پہلے، ایک خوفنا ک آواز آئی گی۔ لقمہ یو ں چلا جائے گا ماں ادھر گرے گی۔ بچہ ادھر گرے گا۔ برتن ادھر گرے گا۔ پرندہ اوپر نہیں جائے گا۔

یوں نیچے گر جائےگا۔ تخت شاہی الٹا دیا جائے گا۔ سہرے بکھر جائیں گے۔ پھول مرجھا جائیں گے۔ نغمے نوحے میں تبدیل ہوجائیں گے۔ زمین تھرتھرائی جائے گی۔ پہاڑ لرز کر ریزہ ہوجائیں گے۔ سارے حسن وجمال ماضی کا افسانہ بن جائیں گے۔ ساری شہنشائیاں ماضی کا افسانہ بن جائیں گی۔ فیکٹریوں کے چلنے والے پہیے رک کر ریزہ ریزہ ہوجائیں گے۔پھر پہلے آسمان پر شیطان کی باری آجائے گی۔ جب عزرائیل ؑ پکڑنے لگے تو وہ غوطہ لگائے گا۔

تو دوسرے کنارے پر جاکھڑا ہوگا۔ عزرائیل ؑ وہاں کھڑے ہوں گے۔ وہ پھر غوطہ لگائے گا۔ دوسرے کنارے نکلے گا ۔آگے عزارئیل ؑ کھڑے ہوں گے۔ پھر غوطہ لگائے گا ۔ پھر چوتھے کنارے پر جائے گا۔ آگے فرشتہ کھڑا ہوگا۔ بولے گا آج مجھے کہاں لے جائے گا۔ تو فرشتہ کہے گا جہاں تو ساری دنیا کو دھکا دے کر گراتارہا۔ بدبخت آج تیری باری ہے۔ آج شیطان بھی مرگیا۔ پہلا آسمان مرگیا۔ دوسرا، تیسرا ، چوتھا، پانچواں ، چھٹا، ساتواں آسمان مرگیا۔

سارے ساتوں آسمان کے فرشتے مرگئے۔نہ مرنے والے مرگئے۔ پھراللہ پوچھےگا۔ کو ن باقی رہ گیا تو ملک الموت کہے گا ہم چار فرشتے ۔باقی سب مرگئے۔ اللہ فرمائےگا۔ جبرائیل اور میکائیل کامار دے۔ تو اللہ کاعرش سفارش کرے گا۔ میرے اللہ ! جبرائیل ؑ اور میکائیل ؑ کو بچالے ۔ تواللہ فرمائے گا: میرے عرش کے نیچے سب کے لیے مو ت ہے۔ یہ زندگی کھیل تماشا نہیں ہے۔ تمہارے پیچھے سارا سسٹم چل رہا ہے۔ تمہیں کیمرے کی آنکھ دیکھ رہی ہو۔ تو کیسے سیدھے ہوجاتے ہو۔ تو رب کی آنکھ سے کیوں نہیں شرماتے ہو۔ اللہ کی آنکھ سے کیوں نہیں شرماتے ہو۔

Leave a Comment