آ یت کریمہ کےنفل۔ ناممکن مسائل حل۔ ہر مراد پوری

Ayat kreama k nafal

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم۔۔۔
السلام علیکم ،امیدہےآپ خیریت سے ہوں گےاورہماری دعابھی ہےکہ اللہ کریم،آپ کوسدا عافیت کے سائے میں رکھے۔ ناظرین کرام۔۔۔ آج میں آپ کی خدمت میں ایک ایسا مختصر اور آسان عمل لے کر حاضر ہوا ہوں کہ جس کے کرنے کی برکت سے انشااللہ اللہ پاکآپ کی ہر قسم کی پریشانی اور مشکل کو دور فرمائیں گے۔آپ کو کسی بھی قسم کی پریشانی ہو کوئی جسمانی یا کاروباری پریشانی ہو آپ کی اولاد کے رشتے ناہونے کی پریشانی ہو ملازمت یا کاروبار میں آپ کو نقصان ہو رہا ہو ملازمت آپ کو نا مل رہی ہو۔

امتحانات میں آپ کو کسی مشکل کا سامنا ہو کسی بھی قسم کی پریشانی جس میں آپ مبتلا ہوں تو آپ اس مختصر اور آسان عمل کو اپنے زندگی کا معمول بنا لیں انشاءاللہ اس خاص عمل کی برکت سے اللہ پاک اپنا فضل فرمائیں گے اور آپ ک تمام پریشانیاں دور ہوں گی۔یہ عمل قرآن کی ایک آیت کریمہ کے نفل ہیں ان کا طریقہ آپ کو بتائیں گے۔ ناظرین کرام۔۔۔عمل کے با رے میں بتا نے سے پہلے میں یہاں اس آیت کریمہ کے بارے میں آپ کو یہ بتانا چاہوں گا کہ یہ وہ آیت ہے جو حضرت یونس علیہ السلام نے سمندر کی تاریکیوں میں مچھلی کے پیٹ اس آیت کریمہ کی تلاوت کی تو اللہ تعالیٰ نے ان کو مچھلی کے پیٹ سے باہر نکالا۔

یہ اللہ تعا لیٰ کی معجز نما آیت ہے جو بے پناہ برکتوں والی ہے ۔ آئیے اس آیت کی برکتوں کے خزانوں پر نظر ڈالتے ہیں جن کو ہماری ظاہری آ نکھ دیکھ نہیں سکتی ہے اور مخفی پروردگار عالم خبیر جانتا ہے۔اس دعا کے شان نزول کو سمجھتے ہوئے مصائب اور روزمرہ زندگی میں ہونے والی خطاؤں کی وجہ سے یہ آیت کریمہ پڑھتے رہنی چاہئے ۔اس میں بھلائی اور ترقی کی ضمانت ہے تو راستے کی ہر رکاوٹ بھی دور جاتی ہے۔

یہ دعا صالحین نے ہمیشہ یاد رکھی اور تسبیحات کا معمول رکھی،اولیاء کرام،فقرا ،و،عارفین نے اسکے اذکار سے منازل عشق طے کیں۔ یہ دعا حضرت یونس علیہ السلام نے مشکلات کے دوران پڑھی تھی جس اللہ نے اپنے قرآن کا حصہ بنا دیا ۔درحقیقت اس دعائے یونس کے فضائل و خصائص اور خواص و برکات بہت ہی زیادہ ہیں جنہیں انسانی فہم اپنے ادراک میں لانے سے قاصر ہے یہ دعا نہایت ہی مجرب و آزمودہ ہے اور بڑی سریع التاثیر ہے قبولیت دعا کے لئے اسے اکسیر اعظم کادرجہ حاصل ہے۔

اس دعا کا ورد رکھنے والا ہر قسم کے دینی و دنیوی رنج و غم، حزن و الم، درد و تکلیف،سختی و مصیبت،گھبراہٹ وپریشانی اور مرض و بیماری سے ہمیشہ کے لئے نجات پالیتا ہے علمائے کرام و بزرگان دین نے اس آیہ کریمہ کے بڑے خواص و برکات اور عجیب و غریب فوائد و اثرات بیان کئے ہیں۔ہر رنج و غم اور مصیبت میں اس دعا ئے مبارکہ کا پڑھنا انتہائی مفید ہے۔اس کے مفید و مجرب ہونے میں کوئی شک و شبہ نہیں ہے ۔ یہ وہ دعا ہے جو قرآن و حدیث دونوں سے ثابت ہے۔ یہ ذکر غم و فکر کو بھگانے اور خوشیاں اور مسرت سمیٹنے کا سبب ہے .یہ آیت خاص مشکلات کے حل کے لئے منسوب ہے ۔

تو نا ظرین جب مشکلات ، بیما ریاں اور جا دو جنا ت ما یوس کر دیں تو دو رکعت نفل حا جت کی نیت سے پڑ ھیں اس کا مکمل طریقہ ہم آپ کو بتا رہے ہیں کامل توجہ کے ساتھ سماعت فرمائیے گا۔ آپ نے دو رکعت نفل حا جت کی نیت کرنی ہے ۔اللہ اکبر کے بعد ساری نماز اسی طرح ادا کرنی ہے مگر جب آپ سجدے میں جائیں تو ہر سجدے میں سبُحا ن ربی الا علیٰ کے بعد آیت کریمہ چا لیس مر تبہ پڑ ھیں۔ نفل پڑ ھنے کے بعد تین سو با ر آیت کریمہ پڑ ھیں اور پھر 10 منٹ خوب گڑ گڑا کر دعا کریں اللہ سے مانگیں اللہ مانگنے والوں سے خوش ہوتا ہے۔

یہ نفل توجہ اور دھیان سے دن میں ایک مرتبہ ضرور کریں ۔ ان شا اللہ آپ کی مراد پوری ہو گی۔ دشمنوں اور ظالم قائدین کو شکست اور سے دوچار کرنے کے لیے یہ آیت خا ص اہمیت کی حا مل ہے۔جادوگروں اور اس کے مددگاروں کو جادو دوبارہ کرنے اور نئے منتر ڈال کر نقصان پہنچانے سے روکنے اور روکنے کے لئے اس آیت کا ورد کیا جا تا ہے۔پیا رے دوستو ! آیت کریمہ یہ دعا بھی ہے اور کلمہٴ توحید بھی ۔

اس کی برکتوں سے ایک طرف حضرت یونس علیہ السلام ایک ایسی قید یعنی مچھلی کے پیٹ سے آزاد ہوئے جس کا تصور بھی کوئی انسان نہیں کر سکتا تو دوسری طرف ان کی مشرک قوم بھی شرک کی ظلمتوں سے آزاد ہوئی اور ایک اللہ پہ ایمان لے آئی ایک اللہ کی بندگی میں داخل ہو گئی ، بلکہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے اصحاب سے فرمایا میں تمہیں وہ چيز نہ بتاؤں کہ اگرکسی پر کوئی مصیبت اور آزمائش آجاۓ تو وہ اسے پڑھے تو اسے اس سے نجات مل جا ئے گی وہ یونس علیہ السلام کی دعا ہےاس دعا کو آپ سکرین پر بھی ملاحظہ کر سکتے ہیں۔
لَا إِلَهَ إِلَّا أَنْتَ سُبْحَانَكَ إِنِّي كُنْتُ مِنَ الظَّالِمِينَ۔

صحیح حدیث میں ہے کہ جو مسلمان بنده کسی بهی مقصد کے لیے اس کے ساتھ دعاء کرے گا تو اس کی دعاء قبول ہوگی۔یہ مبارک دعاء قرآن مجید میں مذکور هے ، لہذا اس کے پڑھنے سے قرآن کی تلاوت کا ثواب بهی ملے گا۔صحیح حدیث میں ہے کہ اس دعاء میں الله تعالی کا اسم اعظم بهی ہے۔لہذا مشکلات کے حل کے لیے آپ نے دعا کرنی ہے۔ اس عمل کو جتنا زیادہ یقین کے ساتھ کریں گے اتنی ہی جلدی اللہ پاک آپ کو اس عمل سے فائدہ عطا فرمائیں گے ۔ہماری دعا ہے کہ اللہ سبحانہ و تعالیٰ ہمیں شرک سے براٗت اور اپنی گناہوں کے اقرار و پشیمانی کے ساتھ اپنی ہر دعا میں آیت کریمہ کو بھی شامل کرنے کی توفیق عطا کرے۔ آمین

Leave a Comment