کھجور پر سورۃ فاتحہ پڑھ کر دم کریں اور کرشمات دیکھیں

Kahjoor per soorat Fatiha perh ker dam krain

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم۔۔۔
السلام علیکم امیدہےآپ خیریت سے ہوں گےاورہماری دعابھی ہےکہ اللہ کریم،آپ کوسدا عافیت کے سائے میں رکھے۔میرے بھائیو اور بہنوں زندگی میں غم اور پریشانیاں تو ہرانسان کو آتی ہیں کبھی بھی ان غموں اور پریشانیوں سے گھبرانا نہیں چاہیے۔ جب بھی کوئی غم آئے کوئی پریشانی آئے تو اپنا سارا غم اپنا سارا دکھڑا اللہ کو سنائیں ، کیونکہ اللہ پاک سورہ نمل کی باسٹھویں آیت میں فرماتا ہےکہ اَمَّنْ يُّجِيْبُ الْمُضْطَرَّ اِذَا دَعَاهُ وَيَكْشِفُ السُّوْء۔ بھلا وہ کون ہے جو مضطر کی فریاد کو سنتا ہے جب وہ اس کو آواز دیتا ہے اور اس کی مصیبت کو دور کر دیتا ہے۔

اس لئے دوستو جب بھی انسان پر کوئی غم، دکھ، پریشانی نازل ہو تو وہ خالق حقیقی کے سامنے ہی اپنے ہاتھ پھلائے۔بلکہ سورہ بقرہ کی ایک سو چھیاسیویں آیت میں ہےکہ اے پیغمبر! اگر میرے بندے تم سے میرے بارے میں سوال کریں تو کہہ دو کہ میں اپنے بندوں کےبہت قریب ہوں۔ پکارنے والے کی آواز سنتا ہوں جب بھی میرابندا مجھے پکارتا ہےدوستو اگر آپ نے کبھی اپنے آپ کو ایسی صورتحال میں پایا ہے جہاں آپ کسی چیز کے بارے میں پریشان ہیں اور آپ کو خدشہ ہے کہ کچھ ہوجائے گا ،

تب آپ اس عمل کی اہمیت کو سمجھیں گے، یہ عمل دکھوں ،غموں اور پریشانیوں کا ایک بہترین علاج ہےناظرین کرام۔۔۔۔آج ہر شخص پریشانیوں میں جکڑا ہوا ہے اور حکومتی اقدامات کی وجہ سےتوآئے روز ان پریشانیوں میں اضافہ ہی ہوتا چلا جارہا ہے ۔ ویسے تو دنیا میں ہر وقت ہی تبدیلیاں آتی رہتی ہیں ، کبھی صبح ہے تو کبھی شام، کبھی چاندنی ہے تو کبھی اندھیرا ، کبھی دن چھوٹے ہیں تو کبھی راتیں ، کبھی خشکی ہے تو کبھی برسات۔لیکن دوستو بسا اوقات تنگی وپریشانی اپنی بداعمالی کا نتیجہ ہوا کرتی ہے

اس لیے اعمال کی اصلاح پر توجہ کی ضرورت ہے،حضرت انس بن مالکؓ سے مروی ہے کہ رسولِ اکرم ﷺ نے ارشاد فرمایا:’’تم میں سے کوئی پریشانی کی وجہ سے موت کی تمنا نہ کرے۔اگر انسان دکھوں،غموں اور پریشانیوں سے نجات حاصل کرنا چاہتا ہے تو نیکیوں کی طرف سبقت سے کام لےاعمال صالحہ نیک اعمال میں سے ایسی نیکیاں ہیں جو ظاہری طور پر ہلکی پھلکی ہیں ،جہنیں ہم معمولی سمجھ کر ضائع کردیتے ہیں، حالانکہ قطرے قطرے سے سمندر بنتا ہے،کئی چھوٹی چھوٹی نیکیاں مل کر ایک بہت بڑے اجر و ثواب کا باعث بن سکتی ہیں ۔

بعض اوقات خدا کسی انسان کی معمولی سی نیکی کی وجہ سے اس کی مغفرت کردیتا ہےجب کہ بعض اوقات ایک معمولی سا گناہ بھی کسی انسان کو رحمت الہی سے دور کردیتا ہے۔دوستو دکھوں ،غموں اور پریشانیوں کی ایک بہترین دوا نماز کی پابندی ہے ۔پروردگار عالم نے سورۃ بقرہ میں اہل ایمان کو مخاطب کرکے فرمایا ہےکہ اے ایمان والو صبر اور نماز کے ذریعے سے مدد چاہو، بے شک اللہ صبر والوں کے ساتھ ہے۔

اب انسان کا فریضہ ہے کہ جب بھی اس پر کوئی مصیبت یا غم و الم پڑے یا وہ کسی مشکل میں گرفتار ہو تو جمعرات کوبعد نمازفجر، اگر نماز مسجد میں ادا کریں تو سلام کرتے ھی بغیر دعا کرے فورا ً گھر جائیں اور اگر گھر میں نماز ادا کریں تو سلام کرتے ھی عمل کریںاور پھر اپنے گھر کے دروازے کھول دیںاور اپنے گھر کے دروازے کی دہلیز پر بھی بیٹھ جائیں اور پھر سکون سے سات یا نو بار ناک سے لمبہ سانس لیں اور پھر سانس منہ سے خارج کریں۔

عورتیں اپنےگھر کی چھت پر یاصحن میں سات یا نو بار ناک سے لمبہ سانس لیں اور پھر سانس منہ سے خارج کریں۔اسکے بعد ٣١٣ بار تیسرا کلمہ کا ورد کریں ۔ دوران عمل روزانہ ایک کجھور منہ میں رکھنی ھے۔اکیس دانے کجھور لینی ھےاور ہر کجھور کےدانے پر روزانہ اکیس دفعہ سورة فاتحہ پڑھ کر دم کرناہے۔ اگر ممکن ھو تو عطر بھی لگا لیں جو آپکو پسند ھواور پھر جو ورد تیسرا کلمہ کا بتایا ہے اسکا ثواب تحفہ نبی کریم ﷺ کو پیش کردیں۔

اور پھر اپنی ایک ھی دعا کو بار بار مانگیں۔الحَمْدُ ِللهچند دن میں آپکو فرق نظر آے گا۔ پہلے ھی دن دل دماغ سکون میں ھوگا۔ اگلے چند دن میں تمام پریشانی جو ھوگی وہ ختم ھونے لگے گی ان شاء اللہ۔ یاد رکھیں دوستو آج دنیا کی زندگی میں شاید ہمیں نیکیوں کی قدر و منزلت کا احساس نہیں ہے لیکن کل قیامت کے دن یہی وہ چھوٹی چھوٹی نیکیاں ہوں گی جو ہمارے نامہ اعمال کو بھر دیں گی لہذا نیک اعمال کرکے اس دنیا کو بھی اچھا بنائیں اور اپنی آخرت کو بھی سنواریں تاکہ اللہ کی رضا مندی اور خوشنودی حاصل ہوجائے۔

دوستو ایک سچا اور دیندار مسلمان اس بات کو بخوبی جانتا ہے کہ دنیا میں جو بھی چھوٹا یا بڑا غم یا پریشانی اسے لاحق ہوتی ہے اس کے بدلے میں اس کے گناہ معاف کر دیئے جاتے ہیں جیسا کہ پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے فرمایا ہے: مسلمانوں کو جب کوئی رنج، دکھ ، فکر، حزن ایذاء اور غم پہنچتا ہے یہاں تک کہ اگر کوئی کانٹا بھی چبھتا ہے تو اللہ اس کے ذریعے اس کے گناہ معاف کر دیتا ہے۔

جو لوگ اللہ کے ساتھ بندگی، شکر اور صبر کے ذریعے جڑے رہتے ہیں اور بندوں کے ساتھ احسان کا رویہ رکھتے ہیں اللہ ان کی غیب سے مدد کرتا ہے اور ان کے معاملات عزت سے انجام پاتے رہتے ہیں۔دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالی ہم سب کے نیک اور جائز مقاصد پورے فرمائے اور تکلیف دور فرمائے اور ہمیں پانچ وقت کی نماز کے ساتھ قرآن پاک پڑھنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔ ثم آمین۔

Leave a Comment