رزق کی تنگی سے نجا ت کا قرا نی وظیفہ

Rizaq ki tangii sy nijat ki Quranii wazeefa

بسم اللہ الرحمن الرحیم۔۔۔السلام علیکم امید کر تے ہیں کہ آپ خیرت سے ہوں گےاور ہما ری دعا بھی ہے کہ اللہ کریم آپ کو سدا عا فیت کے سا ئے میں رکھے۔نا ظرین اکرام۔۔۔۔۔قرآن کریم اللہ رب العز ت کا کلام ہے اس کا ہر ہر لفظ شک سے با لا تر ہے ۔ قرآن کریم انسا نیت کے لیے ہدا یت کی کتاب ہے۔ قرآن کریم ہما ری انفرادی اور اجتما عی زندگی میں ہمیں ہرطرح کی را ہنما ئ فرا ہم کر تا ہے۔جہاں قرآن کر یم ہما رےاجتماعی زندگی کےمسا ئل کا احاطہ کر تا ہےو ہی پر ہما رےانفرا دی مسا ئل کے لیے بھی رو شنی مہیا کر تا ہے۔

حضرت عبد اللہ بن مسعو د رضی اللہ عنہ فر ما تے ہیں کہ اگر میرا و نٹ بھی گم ہو جا تا تو میں اسے بھی قرآن کر یم سے ہی تلاش کر تا ہوں ۔ اس لئے ہمیں بھی چا ہیے کہ ہم اپنے انفرادی ا ور اجتما عی معا ملا ت میں قر آن کر یم کی طرف ہی ر جو ع کریں۔لہذا رزق کی تنگی سے نجا ت کا قرا نی وظیفہسو رۃ الشو ر یٰ کی آیت نمبر 19 میں مو جود ہے اللہ لطیف بعبادہ یر ز ق من یشا ء و ھو القو ی العز یز۔

ناظرین کرام آپ اس قرآنی دعا کو اپنی نماز میں بھی پڑ ھ سکتے ہیں۔۔۔ا ور صبح شام کے وظا ئف میں شا مل کر سکتے ہیں کیو نکہ۔۔یہی وہ آیت کر یمہ ہےجو اللہ رب العز ت کا اعلان بھی ہے ا ور و ظیفہ قرآن بھی اس میں اللہ رب العزت ارشاد فر ما رہےہیں کہاللہ اپنے بندوں پر مہر با ن ہےاور جسے چا ہتا ہے رزق د یتا ہے ا ور ز بر دست حکمت والا ہے۔ نا ظر ین اکرام۔۔۔۔۔۔ہمیں چا ہیے کہ ہم رزق کے اسبا ب کو اختیار کر نے کے سا تھ ساتھ قرآ نی وظیفہ کا بھی اہتما م کریں تا کہ اس و ظیفہ کو پڑ ھنے سے ہما رے کا م میں بر کت ہو ۔

اور اللہ رب العزت کی مدد شا مل حال ہو۔ جو شخص اسباب محنت کے اختیار کر نے کے ساتھ ساتھ اللہ رب العز ت کی طرف لو لگا تا ہےاللہ رب العزت اسے ضرور عطا کر تے ہیں۔ہم ان قرآنی تعلیمات کو اپنا کر دو نو ں جہانوں میں کا میاب ہو سکتے ہیں۔ اس دنیا میں بھی بر کتیں اور ر حمتیں سمیٹ سکتے ہیں اور آخرت میں بھی سر خرو ہو کر رحمت خداو ندی سے سر فرا ز ہو سکتے ہیں۔اللہ رب العزت ہمیں اس قرآنی و ظیفے کو اہتما م کے سا تھ پڑ ھنے کی تو فیق عطا فر ما ئے اور ہما رے رزق کے مسا ئل کو حل فر ما کر ہم سب پر اپنا کرم فر ما ئیں۔۔۔۔ آمین

Leave a Comment