استغفار کی2 آیتیں

Astaghfar ki 2 Aayatain

بسم اللہ الرحمن الرحیم، السلام علیکم۔ امید کرتے ہیں کہ آپ خیریت سے ہوں گے ۔۔اور ہماری دعا بھی ہے کہ اللہ کریم آپ کو سدا عافیت کے سائے میں رکھے۔۔۔ناظرینِ اکرام۔۔۔۔یہ حقیقت ہے کہ ہر انسان خطا کاپتلا ہے‘ کوئی بھی پارسائی اور پاکدامنی کا دعویٰ نہیں کر سکتا۔تمام اولاد آدم ما سوائے حضرات انبیاء کرام سے گناہوں‘ خطاؤں اور غلطیوں کا سر زد ہونا ممکن ہے لیکن سب سے بہترین انسان وہ ہے جو غلطی کے ندامت کا اظہار کرتا ہے‘

اپنے خالق حقیقی کے در پر آکر دو چار آنسو گراتا ہے اور اپنے مالک کے سامنے گڑ گڑاتےہوئے صدق دل سے توبہ واستغفار کرتا ہے۔ ایسا انسان سب سے بہترین ہے جو غلطی کے بعد صدق دل سے توبہ کرتا ہے۔دنیا میں بسنے والے خاکی حضرات کو منانا تو مشکل ہو سکتا ہے مگر اللہ رب العزت کو راضی کرنا مشکل نہیں ہے۔اور خود اللہ تعالیٰ نے متعدد مقامات پر توبہ واستغفار کرنے کاحکم دیا ہے۔

حضرت عبداﷲ بن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں:قرآن مجید میں دو آیتیں ایسی ہیں کہ اگر کسی بندے نے گناہ کیا اور پھر ان دو آیات کو پڑھا اور اﷲ تعالیٰ سے استغفار کیا تو اسے ضرور ’’مغفرت‘‘ عطاء کر دی جاتی ہے… یعنی اُس کا گناہ معاف کر دیا جاتا ہے …پہلی سورۃ آل عمران کی آیت نمبر 135وَالَّذِيْنَ اِذَا فَعَلُوْا فَاحِشَةً اَوْ ظَلَمُوٓا اَنْفُسَهُمْ ذَكَرُوا اللّٰهَ فَاسْتَغْفَرُوْا لِذُنُوْبِهِمْۖوَمَنْيَّغْفِرُالذُّنُوْبَاِلَّااللَّهُۖوَلَمْيُصِرُّوْاعَلٰىمَافَعَلُوْاوَهُمْيَعْلَمُوْنَ اور دوسری سورۃ النساءآیت نمبر110

وَمَنْ یَّعْمَلْ سُوْٓأً اَوْیَظْلِمْ نَفْسَہٗ ثُمَّ یَسْتَغْفِرِاللّٰہَ یَجِدِاللّٰہَ غَفُوْرًا رَّحِیْمًا: اور جو کوئی بُرائی کرے یا اپنے نفس پر ظلم کرے پھر اﷲ تعالیٰ سے استغفار کرے… (یعنی اﷲ تعالیٰ سے مغفرت اور معافی مانگے… تووہ اﷲ تعالیٰ کوبخشنے والا مہربان پائے گا…‘‘

سبحان اﷲ!… کتنا آسان وظیفہ ہے… آج ہی کوشش کر کے دونوں آیات کو ترجمے کے ساتھ یاد کر لیں… جب بھی گناہ اور غلطی ہووضو کر کے نماز ادا کرکے… ان دو آیات کو توجہ سے پڑھیں اور پھر سچے دل سے استغفار کریں… اور اﷲ تعالیٰ سے مغفرت اور معافی کی پکی امید رکھیں…ہماری دعا ہے کہ اللہ تعالی ہمیں گناہوں سے بچنے اور گناہ ہونے کی صورت میں استغفار کی کثرت کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔آمین

Leave a Comment