زندگی کی حاجتوں اور ضرورتوں کے لئے خصوصی دعا۔۔۔

Zindagii ki hajatoon or zrooratoonk liye Khasoosi dua

بسم اللہ الرحمن الرحیم امید کرتے ہیں کہ آپ خیریت سے ہوں گے۔۔اور ہماری دعا بھی ہے کہ اللہ کریم آپ کو سدا عافیت کے سائے میں رکھے۔۔۔ناظرینِ اکرام۔۔۔۔سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ تعالی عنہ فرماتے ہیں کہ سیدنا موسی علیہ سلام سلام جب مصر سے نکلے تو ان کے پاس کھانے کی کوئی چیز نہ تھی ۔۔۔۔سبزیاں اور درختوں کے پتے کھا کر سفر طے کرتے رہے جب مدین پہنچے تو بھوک سے برا حال تھا تو اس وقت یہ دعا فرمائی کہ اے اللہ میں بھوکا ہوں کچھ کھانے کو دلا اور بے آسرا اور بے وطن ہو کوئی ٹھکانہ عطا فرما چنانچہ اللہ تعالی نے دعا قبول فرمائی اور سارا بندوبست فرما دیا ۔۔۔

۔یہ دعاکے الفاظ قرآنِ پاک میں سورت قصصکی آیت نمبر 24میں موجود ہیں ۔۔ آپ بھی ان الفاظ کو زبانی یاد کر لیجئے۔۔۔آپ بھی ان الفاظ کو زبانی یاد کر لیجئے تاکہ۔۔۔دنیا وآخرت کے فائدے آپ بھی حاصل کرسکیں رَبِّ اِنِّىْ لِمَآ اَنْزَلْتَ اِلَيَّ مِنْ خَيْرٍ فَقِيْرٌ یعنی اے میرے رب اس وقت تو جو خیر بھی میرے لیے بھیج دے میں اس کا محتاج ہوں۔۔۔پیارے دوستو۔۔۔۔ آپ اس قرآنی دعا کو اپنی نماز میں بھی پڑھ سکتے ہیں۔۔

اور صبح شام کے وظائف میں بھی شامل کر سکتے ہیں۔ کیونکہ اس مختصر دعا میں عبدیت کا عجیب مظاہرہ ہے، ایک طرف اللہ تعالیٰ کے سامنے اپنے محتاج ہونے کا ذکر فرما رہے ہیں کہ اس غریب الوطنی میں جہاں کوئی شخص آشنا نظر نہیں آتا، زندگی کی ہر ضرورت کی احتیاج ہے اور دوسری طرف خود سے کوئی نعمت تجویز کرنے کے بجائے معاملہ اللہ تعالیٰ پر چھوڑ رہے ہیں

کہ آپ بھلائی کی صورت بھی تجویز کر کے مجھ پر اوپر سے نازل فرما دیں گے، تو سمجھوں گا کہ اسی کی احتیاج ظاہر کر کے وہی میں نے مانگی ہے، میں اپنی طرف سے کوئی متعین حاجت مانگنے کی حالت میں نہیں ہوں۔۔۔تو اللہ پاک نے آپ کی حاجت پوری فرما دی۔۔اللہ پاک ہمیں بھی اس قرآنی دعا کو پڑھنے والا بنائے اور رزق کے تمام مسائل حل فرمائے۔۔۔۔آمین

Leave a Comment