حضرت محمد ﷺ نے فرمایا کیاتمہیں ایک ایسی چیز نہ بتائیں کہ اگر تم اسے کرنے لگو تو تم میں باہمی محبت پیدا ہوجائے

Hazrat Muhammad ﷺ ny fermaya

حضرت عمر ان بن حصین رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک شخص نے نبی کریم ﷺ کے پا س آکر کہا: “السلام علیکم ” نبی کریمﷺ نے فرمایا: ( اس کے لیے ) دس نیکیاں ہیں ۔ پھر ایک دوسرا شخص آیا اور اس نے کہا: “السلام علیکم ورحمتہ اللہ ” نبی کریم ﷺ نے فرمایا: (اس کے لیے) بیس نیکیاں ہیں۔ پھر ایک اور آدمی آیا اور اس نے کہا:”السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ” نبی کریم ﷺ نے فرمایا: ( اس کے لیے ) تیس نیکیاں ہیں ۔ حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا:قسم ہے اس ذات کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے ، تم جنت میں داخل نہیں ہوسکتے

جب تک کہ تم (صیحح معنوں میں) مومن نہ بن جاؤ اور تم مومن نہیں ہوسکتے جب تک کہ تم آپس میں ایک دوسرے سے (سچی ) محبت نہ کرنے لگو۔ کیا میں تمہیں ایک ایسی چیز نہ بتاؤں کہ اگر تم اسے کرنے لگو تو تم میں باہمی محبت پیدا ہوجائے ( وہ یہ کہ ) آپس میں سلام کو عام کرو(پھیلاؤ)۔ حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے آنحضرت ﷺ نے فرمایابے شک (اسلام) دین آسان ہے اور دین میں جو کوئی سختی کرے گا تو دین اس پر غالب آئے گا اس لئے بیچ بیچ کی چال چلو اور (افضل کام نہ کرسکو تو) اس کے نزدیک رہو اور ثواب کی امید رکھ کر خوش رہو اور صبح کی چہل قدمی اور شام کی چہل قدمی

اور رات کی کچھ چہل قدمی سے مدد لو۔حضرت ابو حمید یا ابو اسیدانصاری رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا جو شخص مسجد میں داخل ہو وہ نبی ﷺ پر درود و سلام پڑھے پھر کہے اللہم افتح لی ابواب رحمتک (اے اللہ میرے لئے اپنی رحمت کے دروازے کھول دے) جب مسجد سے نکلے تو اس طرح کہے اللہم انی اسئلک من فضلک (اے اللہ میں آپ سے تیرا فضل چاہتا ہوں)۔

حضرت اوس بن اوس رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ نبی ﷺ نے فرمایا تمہارے افضل (بہتر) دنوں میں سے جمعہ کا دن سب سے بہتر ہے پس اس روز مجھ پر کثرت سے درود پڑھا کرو کیونکہ تمہارا درود مجھ پر پیش کیا جاتا ہےتو لوگوں نے کہا اے اللہ کے رسول ﷺ آپ ﷺ کی وفات کے بعد ہڈیاں تو بوسیدہ ہوجائیں گی تو پھر ہمارا درود آپ پر کس طرح پیش کیا جائے گا؟ آپ ﷺ نے فرمایا اللہ تعالیٰ نے انبیاء علیہم السلام کے اجسام کو مٹی پر حرام قرار دے دیا ہے (ان کے اجسام کو مٹی نہیں کھاتی)۔

حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول کریم ﷺ نے فرمایا قیامت کے دن میرے قریب سب سے زیادہ وہ لوگ ہوں گے جو مجھ پر کثرت کے ساتھ درود بھیجتے ہیں۔حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ دعا آسمان اور زمین کے درمیان لٹکی رہتی ہے ذرا اوپر نہیں چڑھتی جب تک نبی ﷺ پر درود نہ بھیجے۔

Leave a Comment